Published On: Wed, Aug 17th, 2011

مایوسی بہت بڑھ گئی ، کیا عمران خان پاکستان بچا لے گا ؟

Share This
Tags

کرپشن سے دوراورسماجی خدمات میں سب سے آگےعمران کےاچانک سیاست کےمنظرنامہ پرممکنہ وزیراعظم بن کرابھرنا بڑی تبدیلی کا اشارہ ہے ، جس کا عوام بے صبری سے انتظار کر ینگے

 

فیکٹ رپورٹ
پکار رہا ہے پاکستان
عمران ……….. عمران……….. عمران
بچاکو عمران،بھنور سے نکالو عمران، مسیحا بن جاؤ عمران ، جان ومال کے محافظ بن جاؤ عمران ، وقار کا ضامن بن جاؤ ، عمران مقدر سنواردو، عمران، دنیا بدل دو عمران
مگر یہ صدائیں کرکٹ کے مداحوں کی ہیں اور نہ کرکٹ کے میدان سے ہیں ، جہاں کبھی عمران خان کے باؤنسر ار چھکے حریفوں کو چت کیا کرتے تھے ، جہاں عمران خان کا جلال ہی پاکستان کا وقار تھا، بلکہ یہ صدائیں تو سیاست کے میدان سے آرہی ہیں، یہ عوام کے نعرے ہیں، یہ عوام کی خواہش ہے ، یہ عوام عام کا خواب ہے، جو روایتی سیاستدانوں سے بیزار ہوچکے ہیں، اکتا گئے ہیں اور پریشان ہیں، وہ پناہ مانگ رہے ہیں، بدعنوان سیاستدانوں سے جاگیرداروں سے اور امریکا نواز حکمرانوں سے ، وہ چاہتے ہیں کہ ایک صاف ستھری ساکھ کا مالک لیڈر، جوایماندار ہو، صاف گو، حقیقت پسند، بھروسہ مند، پروقار، بین الاقوای برادری میں قابل قبول ہو اور اب ان کی نظر میں ایسا صرف ایک انسان ہے جو عمران خان ہے ‘ جس کے ساتھ پاکستان ہے۔ مذہبی ہوں یا سیکولر شدت پسند ہو یا اعتدال پسند، امریکا نواز ہوں یا امریکا مخالف ، سب سے اہم بات کہ وہ فوج کی پسند ہے،کیونکہ وہ سیاست میں ہمیشہ مثبت نظریہ کے ساتھ رہا ہے، مگر سیاسی دنگل میں داؤ پیچ میں کمزور ثابت ہونے کے سبب اب تک اقتدار سے دور تھا۔
مگر اب حالات بدل رہے ہیں، عمران خان نے سیاست کے میدان میں بڑے قدم اٹھانے شروع کئے ہیں ۔وہ جوڑ توڑ کی سیاست کو سمجھ کر اب بڑے سیاسی دیو کو بونا بنانے کو تیار ہیں۔ عمران خان کی جماعت تحریک انصاف نے کراچی پورٹ کے سامنے نیٹو افواج کی افغانستان سپلائی کو روکنے کیلئے دھرنا دیا، تو تقریبا8ہزار افراد دھرنے میں شامل ہوئے تھے ۔ عمران خان کا حکومت سے مطالبہ ہے کہ پاکستان اب افغانستان کے نام پر امریکا کی مدد کرنا بند کردے ۔اس دھرنے کی سب سے قابل غور بات یہ تھی کہ اس احتجاجی پروگرام میں ہر طبقے اور سیاسی سوچ کے لوگوں نے شرکت کی تھی۔ سیاسی کارکنوں کے ساتھ مذہبی پارٹیوں کے حامی تھے۔ سنی تحریک کے حامی بھی دھرنے میں شامل ہوئے۔ دھرنے کے دوران مثبت بات یہ رہی کہ نیٹو افواج کی سپلائی میں تاخیر تو ہوئی مگر ایک بات یقینی بن گئی کہ عمران خان کا سیاسی مستقبل روشن ہے۔ یہ تبد یلی یکم مئی کو اسلام آباد کے قریب القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد آئی ہے۔ ایک جانب حکومت اور شدت پسندوں کے درمیان تکرار اور ٹکراؤ جاری تھا، تو دوسری جانب فوج اور آئی ایس آئی کے ساتھ سیاسی جماعتوں کے اختلافات سڑکوں پر آگئے اور اب حالات ایسے ہیں کہ پاکستان میں فوج کی نظر میں عمران خان ہی سب سے موزوں سیاسی متبادل بن کر ابھر رہے ہیں۔ عمران خان اب بدلے ماحول میں لنگو ٹ کس چکے ہیں ، جو زرداری حکومت کیلئے ایک نئی للکار بن گئے ہیں۔
اسامہ کی موت اور۔۔۔۔۔۔۔
دلچسپ بات تو یہ ہے کہ اسامہ کی ہاکت کے بعد جہاں پاکستانی فوج اور سیاسی جماعتوں کے درمیان تعلقات میں تناؤ آرہاہے اور دونوں داخلی سلامتی کیلئے ایک دوسرے پر الزامات عائد کرے رہے ہیں، اس ٹکراؤ کے ماحول میں عمران خان واحد سفید پوش ہیں جو عوام کے ساتھ فوج کیلئے بھی قابل قبول ہیں۔ دراصل تحریک انصاف پارٹی کے پرچم تلے عمران خان نے جو موقف اختیار کیا ہے، جس حکمت عملی کو اپنایا ہے یا جس زبان کااستعمال کیا ہے ، اس نے سابق کرکٹر کو سب کی پسند بنادیا ہے۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ انتخاب کے میدان میں عمران خان خواہ مارکھا رہے ہوں ، مگر اب سیاسی اتھل پتھل کے دوران لگ رہا ہے کہ آنے والے دنوں میں پاکستان ایک اور عمران کا دیدار کرے گا، کیونکہ اس وقت عمران خان جو زبان استعمال کر رہے ہیں ، وہ فوج کی پسندہے۔ وہ اچھے طالبان اور برے طالبان پر یقین رکھتے ہیں ۔ وہ امریکا کے خلاف ہیں۔ ڈرون حملوں پر امریکا پر سخت تنقید کرچکے ہیں۔ وہ ایک جانب قومی سیاسی جماعتوں پر نشانہ لگارہے ہیں ، ان کی پالیسیوں اور فیصلوں کو للکارہے ہیں اور دوسری جانب مذہبی جماعتوں کے ساتھ تعلقات کو دوستانہ بنارہے ہیں۔ دراصل عمران خا ن ، جن کا دماغ کرکٹ کی دنیا میں بے جوڑ تھا، جن کے دماغ نے کرکٹ کی دنیا میں پاکستان کو بادشاہت دلائی تھی ۔ اب پاکستانی سیاست کے چالبازوں کو چت کرنے کیلئے سیاسی باؤنسر پھینک رہے ہیں ۔ فوج اور قومی سیاسی جماعتوں کے درمیان ٹکراؤ نے عمران خان کو ایک درمیانی راستہ دے دیا ہے، وہ فوجی اور مذہبی گروپوں کے ساتھ تال میل اور توازن بنا کر چلنا چاہتے ہیں، وہ مذہبی گروپوں اور فوج کے خلاف بڑبولے بن کا استعمال نہیں کررہے، بلکہ اس کے برعکس پاکستانی لیڈران کے تیور مختلف ہیں۔ نواز شریف کے ساتھ مزید کئی لیڈران نے کہا ہے کہ داخلی سلامتی کیلئے فوج کو جواب دہ ہونا چاہئے۔ نواز شریف کے خلاف صدر آصف علی زرداری نے مورچہ کھول دیا ہے ۔ وہ کہتے ہیں کہ نواز شریف غیر ذمہ داری سے کام لے رہے ہیں، ان کی بیان بازی سے فوج میں بغاوت پیدا ہوگی اور شدت پسند عناصر کو طاقت ملے گی، مگر ساتھ ہی زرداری وزیراعظم کیلئے مزید اختیارات اور پارلیمنٹ کی بالادستی کیلئے آواز بلند کررہے ہیں۔
کرنا ہوگا انتظار…….
اپوزیشن جماعتیں عید کے بعد ایک بڑا مورچہ قائم کرنے والی ہے، جس کے سبب ملک میں سیاسی درجہ حرارت بڑھ جائے گا۔ ان حالات میں عمران خان کیا کریں گے ، یہ آنے والے وقت میں معلوم ہوگا، مگراتنا ضرور ہے کہ اب عمران خان کی سیاست نے انگڑائی لے لی ہے۔ وہ پاکستانی سیاست کے سمندر کی گہرائی ناپ چکے ہیں۔ ان کو اس بات کا احساس ہے کہ وہ پاکستانی سیاست میں اگر قدم جماتے ہیں تو فوج اور مذہبی گروپوں کے ساتھ تال میل رکھنا ہوگا۔ فوج کے سامنے یہ مسئلہ ہوگا کہ اپوزیشن کی بڑی تحریک کو کس طرح کمزور کیا جائے، جبکہ آئی ایس آئی آئی اس معاملے میں فوج کے ساتھ ہوگی۔ اگر زرداری حکومت پو کوئی آفت آئی تو فوج ہی آگے آئے گی ۔ ایسا 2009 میں ہوچکا ہے۔ جب نواز شریف کے ملک گیر مارچ نے ملک کو ٹھپ کر دیا تھا، اپوزیشن نے چیف جسٹس کو دوبارہ بحال کرنے کا مطالبہ کیا تھا، ا سکی حمایت میں عدلیہ کی ہڑتال نے پاکستان کو ٹھپ کردیا تھا۔ اور عوام سڑکوں پر آگئے تھے ۔ زرداری حکومت نے ان مطالبات کو تسلیم کیا تو معلوم ہوا کہ اس مین فوجی سربراہ جنرل پرویز مشرف کیانی کا اہم کردار تھا۔ اب اگر ایسے حالات پید ہوئے اور فوج کے تیءں اپوزیشن اور پی پی پی کا رویہ یکساں رہا تو عمران خا ن ریزرو امیدوار کی حیثیت سے سامنے آسکتے ہیں۔ ایک ایسے سیاستدان جو دائیں بازو کو بھی قبول اور بائیں بازور کو بھی ۔ اگر سیاسی طاقتیں کسی سمجھوتے پر نہیں پہنچ سکیں تو عمران خان بن سکتے ہیں ملک کے وزیر اعظم اور اگر ایسا ہوا تو یہ پاکستانی تاریخ میں ا یک سنہرا باب ہوگا، کیونکہ عمران خان کی سب سے بڑی خوبی یہ ہے کہ وہ صاف ستھرے کردار اور ساکھ کے مالک ہیں۔ بدعنوانیوں سے دور ہیں، سماجی خدمات میں سب سے آگے ہیں، ان کو شوکت خانم کینسر اسپتال اس کی مثال ہے ۔ پاکستانی عوام عمران خان سے کم سے کم یہ توقع کر سکتے ہیں کہ وہ بدعنوانیوں کے خلاف ہونگے، تعلیم پر زور دیں گے ، ہتھیاروں کی تہذیب کو ختم کرینگے اور جمہو ریت کا ذائقہ محسوس کرائیں گے۔ عمران خان کے اچانک پاکستانی سیاست کے منظر نامہ پر ممکنہ وزیراعظم بن کر ابھرنا بڑی تبدیلی کا اشارہ ہے ، جس کیلئے پاکستانی عوام بے صبری سے انتظار کر ینگے۔
Displaying 17 Comments
Have Your Say
  1. MUHAMMAD ZAKRIA says:

    EK KHWAB LOGON NE AZADI KA DAIKHA THA, 1940 KE BAAD, AOR EK KHWAB AJ KI NASAL DAIKH RAHI HA, KE AZASDI MUKAMMAL HOJAYEGI, HAQIQI AZADI LILEGI, WO KHWAB TU SACHA HOA THA, YE BE SACHA HOGA INSHALLAH,,,

    • IMTIAZ KHAN says:

      Haa yai khawab sach ho sakta hai agar hum sub imran khan ka saat dayen to warna wo kod se to kuch nahi kar sakta aaj pora pakistan tabdily cahta hai har shaksh parishan hai yai parishani os waqat b yaad rakni hogi jis din aap ko apna haaq istymal karna ho.os din huamy har ik ko apna apna zate mafad yaad hota hai or pir se un he logo ko apny uppar mosalat kar litay hai or pir zindagi bar rotay hai .is bar sub ko ik he faisla karna hoga ..k sirf p.T.I imran khan .. sach ka saat dogay to ALLHA b humra saat diga…

  2. Masood ul haq says:

    In the pressent situation Imran is only hope and solution to save Pakistan.

  3. Bulbul says:

    Imran khan acha admi hai .sirf ek bat sai ikhtalaf hai .us ke party mai ohda us ko milta hai .jo amear ho .garib karkun ko sirf naray milty hai .dilasy milty hai .kash imran khan garib admi ko agai lata .khair khuda imran ko kuch acha krny kai kabil bnay .yai jo mainy bat ki .es ke tehkeak kr lay phly ap sb bhai .dears aj hr pk ka javan udas hai .pk sai love krta hai .pr us ko ache kiadt nhe milti .

  4. salim khan says:

    me junoni hun………har os shakhs ka jo saafgo,aur sacha ho…..mje is waqt imran khan k alawa 2sra koe b sacha nazar ni ata…..inshaallah hamara wazir-e-azam imran khan he hoga…..jo pakistan ko haqeeqi islami state banaega…!

  5. Madiha Khan says:

    I love you Imran.

  6. sohail says:

    we decided that we vote only for imran.

  7. sumaira says:

    he also will sell Pakistan to jews.

    • Shafeeq says:

      Sumaira you are totelly wrong… imran khan will not sell to pakista..what you have to say? agin we have to elect to ppp oar N lea, jumate islami….common yar wake up youth,,,,,,,,,,,,,

    • hamid ullah khattak says:

      Sumaira you are hundred percent right.His sons are being brought up with jews.

  8. Ali says:

    Interesting stuff and comments. But i will say such comments and are just a surface analysis. Imran khan might be a great leader i don’t argue on his personalty and political skills but i will appreciate if one can justify Him keeping in view my below stated realities.
    * In democracy only one can be made prime minister or head of the state who have majority votes. Yes imran can be selected provided with all the Bad guys of politics one again in the show to make the required votes. ANYONE can deny the fact “NO”.
    Imran khan will be just a change of face nothing else and believe me brothers if it ever happened you will change your comments about zardar same as you admire musharaf’s period in comparison to Zardari.
    *Same ANP Same MQM same Guter people will be alongside him saving pakistan once again.

    • Shafeeq says:

      jago brother dunya kaha punchi hai oar tum kaha ho…qarzo tally dab gahyaya ho…kia tum jantay k pakistan k halat aaj kal kia hai…neend say out kar bath karo..ya kesi taleem yafta k sath bait kar bath karo.

  9. Shafeeq says:

    I think imran khan will save to pakistan…plz reject to ppp and nawaz,molana fazlu,q lea.jumat islami…..

  10. Anonymous says:

    It seems either sumaira is totally desperate or commented generally or want to live in same system in hands of bloody PPP or PML-N.

    Imran khan deserve the chance to be in power now!

    Remember you all; the memo is not only an issue or piece of paper, if you people ever heard a little about its contents/conditions, you will understand it’s like an agreement bloody ppp want to sign this agreement with USA to be in power forever, in other words these fucking ppp people are considering Pakistan as a company and making an agreement so called “MEMO” and under this agreement they will be managing Pakistan according to USA instructions and get paid for it!!!! This is complete Shit. They desire to get this agreement signed and make it effective, but if ISI/establishment and Army will play their role honestly then the bloody ppp people won’t succeed in their conspiracy and eagerness.

    If they are not planning this like i said above then why they are trying to ignore this issue????????

    Spread this awareness among people so we can get to know what’s actually this fucking memo issue is?

  11. Irfan says:

    please for God say support Imran Khan bring some thing new in Pakistan new ideas
    and Prayer for Pakistan

  12. Moon says:

    imran is very international thief , he has no his own agenda just only to Criticism others & i believe that the person with that ideas cannot do nothing, he can only to criticize others so no need to support this Monkey. first he said that he will never take old faces but then what happen that every LOTA from every party he take , He cannot give ticket to fresh educated people , OH LOGO Jago this is Banarsi Tag

  13. muhammad zaffar iqbal mughal says:

    tamam bhae bhnon ko adaab
    mujhy english nahe aate jin doston ny english main apni ray ka izhar kia woh jo acha samjhy likh dia. baki bhae behnon ny bhe apni apni ray de . waqai imran khan as waqt papolar ho raha hy . as waqt mulk mian jo halat hain awr jo kuch horha hy as sy har shakhs byzar hy. imran khan samet tamam log kehty hain kay ye krepton logon ka tola hay ye bat apni jagha 100% durst hay imran khan ki nazar main nwaz sharif bhe krept hy par kam. imran khan nay is waqt nawaz sharif par bhe bol rkha hy awr adalton tak bat aa gae hay app sab ye bataen kay is waqt Pakistan ko krept logon sy nejat delani hy- ya pher apass main mahaz arae karni hy jab nawaz sharif PPP ky sath tha us waqt imran khan ky elawa awr log bhe usy PPP ki B tem samjhty thy -mazmon negar ny likha hy jab nawaz sharif ny adliya bhal kany ky leye logon ko baher nekala to molk ko thap kar dia pher adliya ki hartal ny molk ko thap kar dia imran to khod bhe adliya ko azad dekna cahta tha awr aftkhar Muhammad Ch. ko bahal karana cahta tha use tehrik main imran khan ki bheno ky sath police ny narwa salok kia tha jis ki pore kom ny muzamat ki thee kheer jo hoa so hoa ab imran khan do mahaz par lar lrha hay – imran khan kehta tha ky mere jamat mian koe porana seyastan na ho ga ab to masha ALLAH kafe porany awr khany peny waly an ky sath haen – dosre bat ye ky as waqt imran khan ko cahye ky wo jmate islami awr nawaz sharif ko apny kareb karta awr PPP ko harwata lekin as waqt imran khan nwaz sharif ky whot tory ga aska faida PPP ko hoga awr ye bhe USA awr India ki ak chal hay as waqt molk ko to in logon sy nejat delwao pher nawaz sharif awr dosron sy bhe nepat lena – ALLAH na kary as bar imran khan ki waja sy PPP No.1 aate hay awr imran khan No.2 par awr nawaz sharif No.3 par aaty hain to awr kese ky pas atny whot nahe hoty ky woh hakomat bna sky pher imran khan kia karen gy?

Leave a comment

  • shylabark on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات
  • shylabark on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات
  • randisl3 on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات
  • jenaber on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات
  • billywelsh on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات