Published On: Sat, May 28th, 2011

کراچی میں ایبٹ آباد کی طرح آپریشن،بھارتی کمانڈوز کےکراچی میں گھسنےکا منصوبہ بےنقاب

بھارتی خفیہ ایجنسیاں بھی کیا خوب ڈرامے کرتی ہیں ۔ وہ سمجھتی ہیں کہ پاکستان ان کیلئے کوئی تر نوالہ ہے ۔ اس کا ثبوت یہ ہے کہ امریکہ کی طرف سے ایبٹ آباد آپریشن کے بعد بھارتی دفاعی ماہرین نے سر جوڑے اور کراچی میں انڈر ورلڈ ڈان داؤد ابراہیم کی موجودگی کا بہانہ بنا کر ایک ایسے ااپریشن کی منصوبہ بند کر لی جو ناممکنات میں سے ہے۔ ( یہ اس منصوبے کا بلیو پرنٹ ہے ) بھارتی احمق سورماؤں نے منصو بہ یہ بنایا کہ کراچی میں ایبٹ آباد آپریشن کی طرح داؤد ابراہیم کو اسکی رہائش گاہ پرکمانڈوز کے ذریعے حملہ کر کے ہلاک کر دیا جائے ۔اس بات سے بے خبر کہ داؤد ابارہیم پاکستان کے شہر کراچی میں ہے یا نہیں ۔ بھارت نے اس آپریشن کی پوری منصوبہ بندی بھی کر لی ۔ وہ یہ بھول گیا کہ پاکستانی نیوی اتنی بے خبر نہیں کہ انہیں سمندر کے راستے بھارتی کمانڈوز کی آمد کا علم نہ ہو ۔بھارت نے منصوبہ یہ بنایا کہ بمبئی سے ایک آبدوز کے ذریعے 12نیوی کمانڈوز کو کراچی سے کچھ دور سمندرمیں پہنچایا جائے ۔جہاں سے یہ کمانڈوز ایک ربر بوٹ کے ذریعے کراچی پہنچیں ۔ کراچی پہنچتے ہی را کے تربیت یافتہ ایجنٹ ، جنہوں نے پہلے سے ایک بس کا انتظام کر رکھا ہے ، انہیں بس میں سوار کرا کے کلفٹن میں وائٹ ہاؤس ( داؤد ابراہیم )تک پہنچا دیں ۔ کمانڈوز برق رفتاری سے وائٹ ہاؤس کا محاصرہ کریں اور آواز پیدا نہ کرنے والی سب مشین گنوں سے عمارت پر ہلہ بول کر داؤد ابراہیم کو ہلاک کردیں ۔ اس کے بعد کمانڈوز آپریشن مکمل کر کے اپنے مطلوبہ مقام پر سمندر میں پہنچیں اور وہاں سے اسی آبدوز کے ذریعے واپس بمبئی پہنچ جائیں ۔یہ منصوبہ کہنے کو تو بڑا اچھا ہے لیکن شائد بھارتی سورما پاکستانی فورسز کی اہلیت کا اندازہ لگانا بھول گئے ۔ اس سارے منصوبے کو احمقوں کا منصوبہ کہا جائے تو بیجا نہ ہو گا۔ پہلی بات تو یہ ہے کہ دنیا جانتی ہے کہ داؤد ابراہیم پاکستان میں نہیں ہے ۔ اس کے باوجود بھارت نے اس طرح کا منصوبہ بنا ڈالا اور اس پر عمل کرنے کے بارے میں سوچنے لگا ۔ لیکن اس بارے میں بھارت کے پاس کوئی جواز نہیں کہ وہ اگر اس آپریشن پر عمل کرنے کی جرات کرتا تو پاکستان کا ردعمل کیا ہوتا ۔ ’’ فیکٹ ‘‘ کو معلوم ہوا ہے کہ پاکستان کو بھارت کے اس منصو بے کی بھنک مل گئی تھی اسی لئے پاکستان نے بھی اپنے اہداف پر حملے کی تیاری کر لی تھی ۔اس سلسلے میں ایک فوجی جرنیل کے ذریعے بھارت کو پیغام بھی بھجوا دیا گیا ۔جس کے بعد بھارتی ایوانوں میں کھلبلی مچ گئی ۔ ذرا سوچیں کہ پاکستان میں ایک طرف بھارت سے امن کی آشا کی بازگشت زوروں پر ہے وہاں دوسری طرف بھارت کی طرف سے اس طرح کے منصوبوں سے جنگ جیسا ماحول پیدا ہو رہا ہے۔یقیناًبھارت اگر اس منصوبے پر عمل کرنے کی ذرا سی بھی کوشش کرتا تو اسے ایسا منہ توڑ جواب دیا جاتا جسے وہ ہمیشہ یاد رکھتا اور دوبارہ ایسا سوچنے کی جرات بھی نہ کرتا ۔
Displaying 11 Comments
Have Your Say
  1. hina says:

    how can we confirm the athentication of this news. i think you are the master mind of this plan. can you justify?
    Hina Lahore

    • fact says:

      Dear Hina.
      Our each report and story is well supported by documentary evidences collected during in depth investigation by a highly skilled team of journalists. if you read our back issues, you stastify and trust us. our sources in pakistan and abroad who who keep intouch, they are in politics, establishment, govt officers, business community and others, so you can trust us because our motto is: we disclose which other try to close , fact, truth and onvestigation. we can not think that Fact publish wrong news.
      Thanks your comments.
      Editor Investigation

  2. Maira says:

    but there is not any documented proofs, no international and local media news about this indian army plan.
    your socrces persons are in ISI or in RAW??
    maira mujeeb
    islamabad

  3. muneeb says:

    very intresting story. aisa he such lekhta rahian.
    Muneeb
    Holland

  4. M. Kashif Jr. says:

    I also read the whole story, well i came to this result that this is only a story, and i am agree with the comments of Hina, no other proof is available from any website. As i also mention in another post in this website that i am a student of Mass. Comm, and Being a student of Mass. Comm, I assume about this whole story, that the writer of this story is a good story write. This is my right to comment against your post. Please provide some real facts against this story. thanks.

  5. Bulbul says:

    Dears .ap nai fact story read ki.itna khna chaho ga .kai 6 year sai fact read kr raha ho .bhot bar esa hoa kai koi story fact nai publich ki .or kuch arsay bad vo he news .daily jang .daily express .and big news papers pr publish hoe .kuch log hai jo sech chupatay nhe .bhtr hai ap old fact magzin read kro .phir us date ya month kai big news paper prho .meri bat ka sbut ap ko mil jay ga .baki pk mai media azad nhe hai .pk mai koi becha kuttay kai katny sai mr jay .to news tv chennl pr a jati hai.but karachi mai one month mai 300 log ktl ho gai .or chennl valy btaty rhai.kai namalom afrad nai ktl kr dia .kise brai channl nai yai avam ko na btaya kai kon ktl kr raha hai .un ko sb pta hai .but sb sahafi hzrat drtay hai .ap yai q fact sai mt pucho kai ap jo btaty hai .vo media keu nhe btata .ap geo news valo sai pucho .kai karachi kai masom logo kay katlo ka jb pta hai.to avam ko keu nhe btaty .or agr nhe pta hai .to vo sahaft kis cheaz ke kr rhay hai .sahafi vo hota hai jo ird gird hr muamly pr niga rhkay or avam ko btay .vo nhe jo dr kai maray news he chupa day.kisi ko koi bat bury lge to muafi chahta ho .meri kisi bat sai ikhtalaf rkhna ap ka hk hai .

  6. Bulbul says:

    Ek or bat .hnsi bhe ati hai .or dukh bhe hota hai .ek bhai nay kaha kai es story(news) ka koi sbut nhe .kesi web site pr ya news paper mai nhe ay .yai only story hai .merai bhai agr yai story(news) kisi site ya news paper pr nhe ay .to sirf es bina pr es ko jhota krar dai dayna insaf nhi .ap phlay tehkeak kro .ek sahafi jb ek new news kisi news paper mai publish krta hai .to us sai phly us ke news bhe ek story hoti hai .mgr jb vo news paper pr ati hai to phir story nhe news bn jati hai .or rahe news kai galt ya sahe honay ke bat .to bhtr hai hm tehkeak krai .phir sech bolay .or agr tehkeak nhe kr sktay .to phir us ko sech smjay ya jhot ap ki marzi .apnai khayalat ka izhar krna ap ka bunyadi hk hai .
    Mai kuch q fact sai krna chaho ga . Q 1.yai news un ko kaha sai pta chali.Q 2.kia india mai fact ke team kam kr rhe hai.jo intayhay khufia news un ko pta chal gai .Q 3.kia yai news fact ko (i s i)ya kisi or egncy kai mumbr nay di.Q 4.agr yai news ap ko pta chali to baki sb news paper ko keu na pta chli .Q 5.agr pk kai media nay yai news logo sai chupai .to es sai un ka kia mqsd tha .Q 5.jb media esi report btany ki himt nhe rkhta .to fact kesay sb kuch bta dayta hai .Q 6.kia fact ko pk army ya (i s i)ke sport hasil hai .Q 7.fact agr sech he bolna chahta hai .to apna news paper keu nhe publish krta .sirf net pr fact publish krnay ka mksd kia hai .umead hai fact idara in q ka tassli bksh javab dai ga .

  7. fact says:

    dear fact is already planning to launch a newpaper. inshallah fact will soon in your hand. baq hum kisi ka agent nahee haian na he hamian ISI koi news dati hay. is ka proof ya hay ka ISI to hum sa nraaz he rahteehay. agar aap old issues read kur laian to aap ko pata chul jai ga jub fact ka office maian robbery huwai the. afsoos ke baat ya hay ka hamari mehnat ko intelligence ka khata maian daal feya jata hay. jis journalist na mehnat ke the usa koi appriciate nahee kurta.
    Thanks

  8. Bulbul says:

    Dear fact .mainy kuch q ka answer manga tha .ap ke mhnt ko kisi or kai khaty mai nhe dala .jaha tk bat appriciat krnay ki hai .to itna he kho ga .jb phli bar fact read kia 4 year sai phly .to tb sai aj tk jb bhe online hota ho .phlay fact open krta ho .kay khe koi new news to nhe ay .dear fact .insan ho kuch q hai jin kai tasli bkhsh javab chahta ho .aj media bhot agai hai .geo news .Ary.jesai big news channel jo sech kay alm brdar bnay phirtay hai .akhir vo yai sb news pk nation sai keu chupaty hai .aj log un pr andha aytimad krtay hai .agr ap ko yai news pta chl jati hai .to un ka network ap logo sai bra ho ga .un ko bhe sb pta ho ga .phir vo keu drtay hai sb btany sai .akhir karachi ke masom avam kai katlo ka koi keu nhe btata.hr bat namalom dhsht grdo kai khaty mai keu dal di jati hai .dear fact jb media he jhota hai .to sech kaha talash krai hm .plz ap apna newspaper publish krai .or hakiki sech awam kai samny lay .vrna yai sechai ka jhota alm brdar media pakistan ke jray khokhli kr day ga .mai or muj jesay hzaro bhai khon kai akhri ktray tk ap kai sath hai .bs shert yai hai .kai ap vo sech avam ko btay jo sech pk media kai hatho ktl ho raha hai .ap nai merai q ka tasli bekhsh javab nhe dia .janta ho ap ke kuch mjburia hai .fact offic robbry ke report many prhi the .(isi) mulk ka mukhlis idara hai .robbry kai time musharf nay (isi) ke kiadt apnai mn pasnd logo kai hath mai di .jis ki vjha sai aj pk ka yai hal hai .vrna (isi) es mushkil vkt mai or apno kai hatho zakhm khany kai bavjod mulk ke hifazt mai apni janay nishavr kr rhe hai
    .khuda isi ke kiadt kisi muhiby vtn kai hath mai dai .amean

  9. aurangzeb says:

    Very good story

  10. i love pak army..
    انڈیاجیسابیوقوف پوری دنیامیںنہیں ملتا
    aur is pak zameen k ifazat k lye jan qurban

Leave a comment

  • keiren on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات
  • rufus on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات
  • lowrie on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات
  • Becоmе а bitсоin millionairе. Get frоm $ 2500 pеr daу: http://qkjypfrsw.grupocelebreeventos.com/5098048c on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات
  • yasser on بول ٹی وی کیخلاف سازش کا سکرپٹ سلطان علی لاکھانی نے لکھا، میر شکیل الرحمان اور میاں عامر محمود حصہ دار بنے ، بول کی بدنامی کے کئی پلانز باقی۔۔۔ نواز لیگ کے میڈیا سیل نے بھی حصہ ڈالا۔۔ حیران کن انکشافات